عالمی وبا سے نمٹنے کے لئے نسل، مذہب اور زبان سے بالاتر ہو کر تعاون کرنا ہو گا، صدر ایردوان

صدر رجب طیب ایردوان نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی عالمی وبا سے نمٹنے کے لئے ہمیں زبان، نسل، مذہب اور علاقائی سوچ سے بالا تر ہو کر باہمی تعاون کو فروغ دینا ہو گا۔

سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں ہونے والی جی 20 سربراہ کانفرنس سے آن لائن خطاب کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ میں اپنے عوام اور اپنی طرف سے آپ تمام لوگوں کو تہہ دل سے شکریہ ادا کرتا ہوں

بدقسمتی سے ہمیں جی 20 سربراہ کانفرنس کورونا وائرس کی وجہ سے آن لائن منعقد کرنی پڑ رہی ہے

صدر ایردوان نے کہا کہ یہ وبا گذشتہ صدی میں صحت عامہ کے لئے بدترین بحران کا باعث بنی۔ اس وبا سے تجارت اور معیشت پر بدترین اثرات مرتب ہوئے۔ تعلیم سے لے کر انسانی معاملات تک اس سے متاثر ہوئے

انہوں نے کہا کہ اس وبا نے ایک بار پھر ہمیں یاد دہانی کروائی ہے کہ ہمیں مذہب، زبان، علاقہ اور نسل سے بالا تر ہو کر ایک انسانی خاندان کی طرح رہنا ہو گا۔ اپنے شہریوں کی ضروریات پورا کرنے کے ساتھ ساتھ ترکی نے 156 ممالک اور 9 بین الاقوامی اداروں کو مدد فراہم کی تاکہ ہمارے بھائی اور دوست اس عالمی وبا سے لڑ سکیں۔

انہوں نے کہا کہ میں سمجھتا ہوں عالمی وبا نے دنیا کی بڑی معیشتوں جی 20 ممالک کی ذمہ داریوں اور اہمیت کو بڑھا دیا ہے۔ ریاض کانفرنس میں کئے گئے فیصلے عالمی وبا کے منفی اثرات کو نہ صرف کم کریں گے بلکہ جی 20 سے وابستہ توقعات مزید بڑھ گئی ہیں۔

صدر ایردوان نے کہا کہ جی 20 سربراہ کانفرنس ایک ایسے وقت میں ہو رہی ہے جب  عالمی بحرانوں میں عالمی تعاون کی اہمیت واضح ہو گئی ہے اس سے پوری انسانیت اور ممالک کو ایک اچھا مستقبل ملے گا۔ عالمی وبا کے باوجود جی 20 سربراہ اجلاس بلانے پر میں سعودی حکومت کا شکر گزار ہوں خاص طور پر اپنے بھائی شاہ سلمان بن عبدالعزیز السعود کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔

پچھلا پڑھیں

کورونا وائرس کی وبا پر عالمی تعاون کے ساتھ مل کر قابو پائیں گے، شاہ سلمان

اگلا پڑھیں

مشرق اور افریقہ کو نظر انداز کئے بغیر مغرب کے ساتھ تعلقات کو فروغ دیں گے، صدر ایردوان

تبصرہ شامل کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے